Forest, Wildlife & Environment Department Government of Gilgit-Baltistan

Top Stories

Latest News

Social Feeds

A great achievement of Field staff of Forest, Parks and Wildlife department GB and local communities in protection of wildlife under Community Controlled Hunting Areas. ... See MoreSee Less
View on Facebook
پریس ریلیز۔محکمہ جنگلی حیات ضلع غذر اور پولیس نے آئی بیکس کی غیرقانونی شکار کرنے والے کو پکڑ لیا۔گھر سے بندوق اور کچھ غیر استعمال شدہ گوشت، چمڑا اور سر برآمد۔وائلڈلائف میجسٹریٹ کی جانب سے مجرم کو ایک سال جیل اور دو لاکھ دس ہزار روپے جرمانے کی سزا۔ آئی بیکس کی غیرقانونی شکار کے حوالے سے مخبر کی اطلاع پر کل وائلڈلائف سٹاف کی مقامی پولیس کے ہمراہ سلطان آباد یاسین ضلع غذر کے رہائشی شیر داود ولد عزیز کے گھر چھاپا مار کر پانچ کلو گوشت کے ساتھ آئی بیکس کا چمڑا ، سر اور واقعے میں استعمال ہونے والا بائیس بور بندوق بر آمد کرکے ملزم کو گرفتار کیا گیا ۔ اور آج وائلڈلائف میجسٹریٹ گلگت غذر محمد عیسیٰ صاحب کی عدالت میں پیش کیا گیا جہاں پر سمری ٹرائیل کے دوران مجرم کی جانب سے اقرار جرم کے بعد گلگت بلتستان وائلڈلائف پریزرویشن ایکٹ، 1975 ، ٹرافی ہنٹنگ گائیڈلائنز اور دیگر قوانین کے تحت مجرم کو دو لاکھ دس ہزار روپے جرمانہ اور ایک سال قید کی سزا سنا کر جیل بھیجدیا گیا جرمانہ ادا نہ کرنے کی صورت میں مجرم کو مذید ایک سال جیل کی سزا بھگتنی ہوگی۔ جبکہ بائیس بور بندوق کو بحق سرکار ضبط کیا گیا۔ اس آئی بیکس کو مجرم نے اسمبر نالہ سیندی میں غیر قانونی طور پر شکار کیا تھا۔ ضبط شدہ گقشت کو بھی موقع پر ہی نیلام کرکے حاصل ہونے والی رقم کو داخل خزانہ کیا گیا۔ واضح رہے جنگلی حیات کی غیر قانونی شکار کو روکنے انتہائی سخت اقدامات کئے گئے ہیں جس کی وجہ سے گلگت بلتستان میں نہ صرف غیرقانونی شکار میں واضح کمی دیکھنے واقع ہوئی ہے بلکہ ان جنگلی حیات کی آبادی میں بھی روز افزوں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے جس کا ثبوت ان جانوروں کا آزادانہ طور پر مقامی آبادی میں آنا اور محفوظ طور پر واپس جانا بھی ہے۔ اس کامیابی کی بنیادی وجہ محکمہ جنگلی حیات کی سخت کاروائیوں کے ساتھ ساتھ متعلقہ علاقوں کے لوگوں کا منظم ہونا اور محکمہ کے ساتھ ان کا بھرپور تعاون بھی ہے۔ واضح رہے کہ گلگت بلتستان کا تقریباً 60 فیصد حصہ پروٹیکٹڈ ایریا ڈکلئیر ہوچکا ہے جو کہ پاکستان میں سب سے زیادہ ہے۔ ... See MoreSee Less
View on Facebook
View on Facebook
View on Facebook
Vacancies available in Astore Forest Division. ... See MoreSee Less
View on Facebook
*محکمہ جنگلات، جنگلی حیات و ماحولیات،حکومت گلگت بلتستان**پریس نوٹ**22 نومبر 2023*گلگت: محکمہ جنگلات،پارکس, جنگلی حیات و ماحولیات اور انٹرنیشنل سینٹر فار انٹیگریٹڈ ماونٹین ڈیویلپمنٹ ICIMOD کے زیر اہتمام رینج لینڈ پالیسی کے حوالے سے مقامی ہوٹل میں ایک ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔ چئیرمین ریفارمز اینڈ انیشیٹیوز کمیٹی گلگت بلتستان امجد حسین ایڈوکیٹ نے ورکشاپ میں خصوصی طور پر شرکت کی۔سیکریٹری جنگلات، جنگلی حیات و ماحولیات گلگت بلتستان ظفر وقار تاج نے اپنے ابتدائی کلمات میں رینج لینڈ پالیسی مسودے کے حوالے سے شرکاء کو آگاہ کیا۔ چئیرمین ریفارمز اینڈ انیشیٹیوز امجد حسین ایڈوکیٹ نے ورکشاپ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ رینج لینڈ پالیسی ڈرافٹ کو سٹیک ہولڈرز کے ساتھ مشاورت کے بعد کابینہ سے منظوری کے لئے بھر پور کوشش کرینگے۔انہوں نے کہا کسی بھی پالیسی کو زمینی حقائق اور مستقبل کے تقاضوں کے مطابق تیار کرکے عملدرآمد یقینی بنانے کی ضرورت ہے۔ محکمہ جنگلات و جنگلی حیات کے زیراہتمام ٹرافی ہنٹنگ کا پروگرام کامیابی سے جاری ہے اور اسی وجہ سے گلگت بلتستان کو زرمبادلہ مل رہا ہے اور کمیونٹی کی ترقی کے علاوہ جنگلی حیات کے تحفظ کے اقدامات بھی کئے جا رہے ہیں، اسی طرح رینج لینڈ کے بہتر انتظام اور انصرام سے خطہ معاشی خودکفالت کی راہ پر گامزن ہو سکتا ہے اور قدرتی ماحول کا بھی تحفظ یقینی بنایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا ہماری بھرپور کوشش ہوگی کہ رینج لینڈ پالیسی بھی ٹرافی ہنٹنگ کی طرح کامیاب منصوبوں میں شامل ہو۔ انہوں نے مزید کہا کہ گلگت بلتستان میں رینج لینڈ کے حوالے سے وسیع مواقع موجود ہیں اور انکی تشہیر ناگزیر ہے.ان کا کہنا تھا کہ قدرتی وسائل کی حفاظت ترقی کی ضامن ہے اور حکومت کو مقامی کمیونٹی میں اس حوالے سے شعور اجاگر کرنے کیلئے اقدامات کرنے ہونگے۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیر خزانہ و ممبر گلگت بلتستان اسمبلی جاوید منوا نےکہا کہ یہ ورکشاپ میں تمام سٹیک ہولڈرز کی نمائندگی کی وجہ سے پروقار دکھائی دے رہا ہے اور مجھے خوشی ہوئی کہ پالیسی کے حوالے سے سٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے لئے یہ سیشن رکھا گیا ہے۔انہوں نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ پالیسی بنانا آسان ہے۔مگر اس پر عملدرآمد میں مشکلات ضرور پیش آئیں گی، اس لیئے مشاورت کسی بھی پالیسی کے لئے لازم و ملزوم ہے اس لیئے کوئی بھی پالیسی ڈرافٹ پر کام کے دوران پبلک سے مشاورت ہر صورت کرنی چاہئے تاکہ مستقبل میں عملدرآمد کے دوران مشکلات کا سامنا نہ ہو۔ اس لیئے آج کے سیشن میں سٹیک ہولڈرز کی طرف سے اٹھائے جانے والے تجاویز و آراء کو مدنظر رکھتے ہوئے پالیسی کو ترتیب دینے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ دنیا آج درخت کھڑا رکھنے کے پیسے لے رہے ہیں اور ہم لوگ انہیں کاٹ کے کمانے کے عادی ہو چکے ہیں۔انہوں نے کہا گلگت بلتستان میں موجود قدرتی وسائل کی تحفظ کے لئے کام کرنے کی ضرورت ہے اس پر پوری کوشش کے ساتھ عوام کے تعاون سے کام کریں گے۔ورکشاپ میں چیف ایگزیکٹیو سونی جواری سینٹر فار پبلک پالیسی اظہار ہنزائی سمیت مختلف محکموں کے نمائندے ،این جی اوز، پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے نمائندے و دیگر سٹیک ہولڈرز شریک ہوئے۔ یہ ورکشاپ کل بھی جاری رہے گا۔ Information Department Gilgit-Baltistan Office of the Chief Secretary, Gilgit Baltistan Ministry of Climate Change, Govt of Pakistan Department of Forestry, Range & Wildlife Management, KIU. PAMIR TIMES Ten Billion Tree Tsunami Programme Gilgit-Baltistan Gilgit Forest Division Gilgit-Baltistan Environmental Protection Agency ... See MoreSee Less
View on Facebook

Our Vision and Mandate

Protecting, conserving, managing and developing the forestry, wildlife and allied resources of Gilgit-Baltistan through sustainable integrated natural resource management with a vision to develop the region as a biodiversity pool and a hub for eco-tourism.
Currently the Department is focusing on collaborative management of Protected Forests, Protected Areas and other biodiversity hotspots, Community-based management of Private Forests, creation of more protected areas with a vision to declare 70% of GB as protected areas, development of farm forestry through sustainable production of nursery stocks, consultative planning mechanisms including sectoral and thematic roundtables/interests groups through management plans and valley conservation plans, alternative energy sources and Payment for…

Downloads

Trophy Hunting Guidelines (English)

Gilgit-Baltistan Forest Act, 2019 Gazzette

NA Wildliffe Act 1975

TORs - Trophy Hunting Study

Forest Fire fighting Guidelines

Latest Jobs

Currently there are No Jobs